شاہ لطیف۔۔۔

پرديسان پنڌ ڪري هلي آيو هون
اونچو تون عرش تي، آن ڀورو مٿي ڀون
ڪئين تسندين تون، هي سر سوالي مڱڻو

بیجل رائے ڈیاچ سے کہتا ہے:
اے راجہ!
پردیس سے سعی کرتا تجھ تک پہنچا ہوں
تیرا مقام عرش پر ہے، میں انجان دھرتی پر ہوں
تو کیسے میرا سوال پورا کرے گا
میں اپنے گیت کے بدلے تیرا سر مانگتا ہوں

(سُر سورٹھ: پہلی داستان)

Share
0